شامی حکومت کو للکارنے والی 7 سالہ بچی کی ترک صدرسے ملاقات

اپنے ٹوئٹس کے ذریعے بشارالاسد حکومت کو للکارنے والی 7 سالہ بچی  اپنے والدین کے ہمراہ ترکی پہنچ گئی جہاں اس نے ترک صدر رجب طیب اردوان سے ملاقات بھی کی۔ اپنے ٹوئٹر اکاؤنٹس سے مشہور ہونے والی حلب سے انخلا کرنے والی 7 سالہ بچی باناالبید  بالاخر ترکی پہنچ گئی جہاں انہوں نے اپنے والدین کے ہمراہ  صدارتی محل میں صدر رجب طیب اردوان سے ملاقات کی۔ ترک صدر نے بانا اور اس کے بھائی کو سینے سے لگا کر انہیں خوش آمدید کہا اور انہیں پیار کرتے رہے.

Banaجب کہ بانا البید نے  رجب طیب اردگان سے ملاقات کی  تصویر بھی ٹوئٹرپر اپنے فالوورز سے شیئر کی اور لکھا کہ ترک صدر سے مل کر بہت خوشی ہوئی ، جنگ زدہ حلب میں بچوں کی جانوں کی حفاظت کرنے پر ترکی کی شکر گزار ہوں۔ باناالبید کے ٹوئٹر پر 3 لاکھ 30 ہزار سے زائد فالوورز ہیں جو روزانہ کی بنیاد پر اپنے فالوورز کو حلب کی صورتحال سے وقفے وقفے سے آگاہ کرتی رہتی تھیں. جب کہ انہوں نے تباہ شدہ عمارات کی متعدد تصاویر بھی شیئر کیں۔ دوسری جانب بشارالاسد حکومت کی جانب سے بانا البید اور ان کی والدہ فاطمہ  کو حکومت کے خلاف پروپیگنڈے  کا ذمہ دار ٹھہرایا جاتا رہا ہے۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s