امریکہ میں نسلی امتیاز : قومی ترانے کے احترام میں کھڑا ہونے سے انکار

امریکا کی نیشنل فٹبال لیگ میں سان فرانسسکو 49ارز کے کوارٹر بیک نے قومی ترانے کے احترام میں کھڑے ہونے سے انکار کردیا جس سے ایک نیا تنازع کھڑا ہو گیا ہے۔ جمعے کو ہونے والے میچ میں کھلاڑی نے ترانے پر کھڑے نہ ہو کر امریکا میں سیاہ فام افراد سے جاری مبینہ زیادتیوں اور ناانصافیوں کے خلاف احتجاج کیا۔ ان کی ٹیم نے تصدیق کی کہ کولن کیپرنک ترانے کیلئے کھڑے نہیں ہوئے اور انہوں نے یہ بیان جاری کیا ہے۔ بیان میں کہا گیا کہ قومی ترانہ میچ سے قبل تقریب کا اہم عنصر ہے اور ہمیشہ رہے گا۔ یہ اپنے ملک کی تعظیم کا ایک طریقہ اور ہمیں بحیثیت شہری حاصل آزادیوں کا عکاس ہوتا ہے۔ یہ ابھی تک واضح نہیں ہو سکا کہ کیپرنک کیوں بیٹھے لیکن انہوں نے اپنے اس عمل کی وضاحت اور دفاع کرتے ہوئے کہا کہ میں اس ملک یا پرچم کی تعظیم میں کھڑا نہیں ہو سکتا جو سیاہ فام اور دوسری نسلوں کے لوگوں کو دباتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ اگر ذاتی حیثٰت میں دیکھا جائے تو اسے خودغرضی سے تعبیر کیا جا سکتا ہے لیکن میرے لیے ہی فٹبال سے بڑا مقصد ہے۔ این ایف ایل کی میڈیا رپورٹ کے مطابق فٹبالر کو سفید فام والدین نے گود لیا تھا اور عوامی سطح پر اپنے جذبات کی ترجمانی کرنے سے قبل انہوں نے اس بات کا اہل خانہ سے بھی تذکرہ کیا تھا۔ انہوں نے کہا کہ مجھے کسی سے اجازت لینے کی ضرورت نہیں، میں ظلم و جبر کا شکار لوگوں کے ساتھ کھڑا ہوں گا، اگر وہ مجھے فٹبال کے کھیل سے دور رکھنا چاہیں تو مجھے یہ بھی منظور ہے کیونکہ میں جانتا ہوں کہ میں نے درست چیز کیلئے آواز اٹھائی ہے۔ اس معاملے پر این ایف ایل نے اپنے بیان میں کہا کہ قومی ترانے کے دوران ہم کھلاڑیوں کے کھڑے ہونے کی حوصلہ افزائی کرتے ہین لیکن یہ ضروری امر نہیں۔ اس میچ میں ان کی ٹیم کو برین بے کے ہاتھوں 21-10 سے شکست کا منہ دیکھنا پڑا۔

Advertisements

Leave a Reply

Fill in your details below or click an icon to log in:

WordPress.com Logo

You are commenting using your WordPress.com account. Log Out / Change )

Twitter picture

You are commenting using your Twitter account. Log Out / Change )

Facebook photo

You are commenting using your Facebook account. Log Out / Change )

Google+ photo

You are commenting using your Google+ account. Log Out / Change )

Connecting to %s