Chinese New Year Celebrations

Chinese flocked to temples and fairs to pray for good health and fortune on Monday, the first day of the Lunar New Year. In Beijing, hundreds of thousands of people visited traditional fairs held in parks, as well as Buddhist and Taoist temples offering singing and dance performances and open-air markets selling handicrafts. Monday marks the first day of the Year of the Monkey ─ the ninth animal on the Chinese zodiac calendar. The weeklong holiday, known as the Spring Festival in China, is focused on family reunion and is a time when students and migrant workers return to their hometowns. It is the country’s most important holiday, equivalent to Christmas for many in the West.

Millions of children hard at work in India

Across the globe more than 150 million children between age five and 14 are involved in child labour, while India is home to the highest number of working children in the world. On International Day Against Child Labour on Friday, attempts are under way to put a stop to it. In India, more than 28 million children have jobs, according to UNICEF estimates. India’s current child labour law prohibits children under the age of 14 from being employed in hazardous jobs.
 A recent UN report said nearly 300 million people still live under poverty in India. For a country with extreme inequalities, an abolitionist approach may not be a practical solution. However, Ribhu pointed out that “poverty is also perpetuated with the exploitation of children”. “Currently there are about as many unemployed adults in India as there are working children. So these jobs are being taken by children instead of adults in the name of cheap labour,” he said.

The Lunar New Year : Rituals and Legends

Lunar New Year is the first day of a secular, sacred, or other guise whose months are coordinated by the cycles of the moon. The whole year may account to a purely lunar calendar, which is not coordinated to a solar calendar (and, thus, may progress or retrogress through the solar year by comparison to it, depending on whether the lunar calendar has more or fewer than 13 months); or the year may account to a lunisolar calendar, whose months coordinate to the cycles of the moon but whose length is periodically adjusted to keep it relatively in sync with the solar year – typically by adding an intercalary month, when needed.

ایپل، فیس بک اور مائیکروسوفٹ کی فی سیکنڈ مجموعی آمدنی 2 ہزار ڈالر ہے، سروے

امریکی ادارے کی جانب سے کیے گئے سروے کے مطابق ایپل، مائیکروسوفٹ اور فیس بک کمپنیاں مشترکہ طور پر 2 ہزار ڈالر فی سیکنڈ کمارہی ہیں اور ان میں سے 50 فیصد سے زائد رقم ایپل کے حصے میں آرہی ہے۔

امریکی ادارے ٹیکس جسٹس کا کہنا ہےکہ ٹیکنالوجی سے وابستہ مشہور کمپنیاں کم ازکم سال میں 90 ارب ڈالر کا ٹیکس ادا نہیں کرتیں اور وہ اس کے لیے مختلف حربے استعمال کرتی ہیں۔ کمپنی کے مطابق ایپل، ایلفابیٹ، مائیکروسوفٹ اور فیس بک فی منٹ ایک لاکھ 40 ہزار ڈالر رقم بنارہی ہیں جب کہ فیس بک کے اثاثوں میں تیزی سے اضافہ ہورہا ہے کیونکہ 2015 کی ابتدا میں اس کے اثاثے 3.85  ارب ڈالر تھے جو اب 5.84 ڈالر تک پہنچ چکے ہیں۔

کمپنی کے مطابق ایپل کے رواں ہفتے کے اثاثے 547 ارب ڈالر تک پہنچ چکے ہیں جب کہ دلچسپ بات یہ ہے کہ یہ 4 کمپنیاں دولت کمانے میں دنیا کی تمام تیل کی کمپنیوں سے بھی آگے ہیں اور ان کی دولت میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔ کمپنی سروے کے مطابق ٹویٹر کمپنی اسٹاک بازار میں زیرِ گردش حصص کی 45 فیصد آمدنی اپنے ملازمین کو دیتی ہے اور گزشتہ برس اس نے اپنے ملازمین کو تنخواہوں اور فائدے کی مد میں 631 ملین ڈالر دیئے ہیں۔

اس حمام میں سب نظر آتا ہے

ایک موقر پاکستانی انگریزی روزنامے کے مطابق اسلام آباد کی ڈپلومیٹک انکلیو میں قائم بعض غیر ملکی سفارتخانے کس طرح وزیرِ اعظم سیکرٹیریٹ سمیت دیگر حساس عمارات میں ہونے والی گفتگو سے باخبر رہتے ہیں ۔اس بابت انٹیلی جینس بیورو ( آئی بی ) کے ڈائریکٹر جنرل آفتاب سلطان منگل کو سینیٹ کی قائمہ کمیٹی برائے امورِ داخلہ کو بریفنگ دیں گے۔

سابق وزیرِ داخلہ رحمان ملک کا کہنا ہے کہ دو ہزار بارہ میں کابینہ کا ایک اجلاس اس لیے ملتوی کرنا پڑا کیونکہ قومی انٹیلی جینس ایجنسیاں وزیرِ اعظم ہاؤس کے کیبنٹ روم میں ڈپلومیٹک انکلیو سے آنے والے طاقتور سگنلز کو روکنے میں ناکام رہیں۔
سینیٹ کی قائمہ کمیٹی اس سے پہلے آئی بی کے سربراہ کو سابق وزیرِ خزانہ سلیم مانڈوی والا کا ذاتی فون ٹیپ کرنے کی شکایت پر وضاحت کے لیے طلب کر چکی ہے۔آئی بی کے چیف نے اس وقت دعوی کیا کہ ان کا ادارہ سوائے دھشت گردوں اور جرائم پیشہ افراد کے کسی کے فون وزیرِ اعظم کی اجازت کے بغیر ٹیپ نہیں کرسکتا۔ جب انھیں سلیم مانڈوی والا نے آئی بی کے ایک انٹرنل میمو کی کاپی پیش کی جس میں ان کے ذاتی فون کا مکمل ڈیٹا حاصل کرنے کی ہدائیت کی گئی تھی تو آئی بی کے سربراہ نے پہلے تو اسے جعلی میمو قرار دیا اور پھر وعدہ کیا کہ وہ دس روز کے اندر اس کی حقیقت کے بارے میں کمیٹی کو آگاہ کریں گے۔ مگر وہ دس روز کبھی نہ آ ئے۔
سابق وزیرِ خزانہ ڈاکٹر مبشر حسن نے کوئی دو برس پہلے اپنے ایک انٹرویو میں بتایا تھا کہ بھٹو صاحب لاکھ طاقتور سہی مگر اپنے دفتر اور بیڈروم کے فون سیٹس یا دیواروں یا فرنیچر میں نصب جاسوسی کے آلات نہیں ہٹوا سکے۔ بھٹو صاحب کو جب بھی کوئی اہم بات کرنا ہوتی تو وزیرِ اعظم ہاؤس کے لان میں ٹہلتے ہوئے کرتے۔

انیس سو ستتر میں بھٹو حکومت کے خلاف بننے والے قومی اتحاد کے پہلے سیکرٹری جنرل رفیق باجوہ کو اس شبہے میں عہدے سے ہٹا کر پروفیسر غفور احمد کو سیکریٹری جنرل بنایا گیا کہ باجوہ صاحب ’ ڈبل ایجنٹ‘ ہیں۔

جنرل ضیا کے خلاف چلنے والی تحریکِ بحالیِ جمہوریت کی مجلسِ قائمہ جو بھی فیصلے کرتی ان کی تفصیلات ایک گھنٹے کے اندر جنرل ضیا کی میز پر ہوتی تھیں۔
آج کی دنیا میں کسی کا کسی کو جاسوسی سے روکنا اور کسی کا کسی کو جاسوسی نہ کرنے کا یقین دلانا سوائے وقت کے زیاں کے کچھ بھی نہیں۔اگر ہم پے کسی نے اب تک ہاتھ نہیں ڈالا یا بلیک میل نہیں کیا تو اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہمیں کوئی نہیں دیکھ رہا ۔آسمان پر خدا ہے اور زمین پر نائبِ خدا کی انٹیلی جینس ایجنسیاں
میاں نواز شریف نے پرویز مشرف کو برطرف کرنے کا فیصلہ ناقابلِ اعتبار زمین پر نہیں بلکہ طیارے میں پرواز کے شور کی سہولت میں مشاورت کے بعد فائنل کیا تھا۔
امریکی جاسوسی نظام میں شگاف ڈالنے والے جولین اسانژ کے مطابق ای میل سسٹم اور سوشل میڈیا کے طفیل ہر کوئی سی آئی اے سمیت ہر سرکردہ انٹیلی جنیس ایجنسی کے سامنے عریاں ہے۔اس قدر عریاں کہ اب جاسوسی کے آلاتی کان لگانے کی ہی ضرورت نہیں۔ اگر امریکی مخبر جرمن چانسلر اینجلا مرکل کا ذاتی فون پانچ برس تک ٹیپ کر سکتے ہیں تو باقی وی وی آئی پیز کیا بیچتے ہیں۔ یہ وہ راز ہے جسے سائبر کمیونکیشن سے واقف ایک اوسط درجے کا دہشت گرد بھی جانتا ہے۔
کیا بھارتی خفیہ ایجنسی را نے کرگل مہم کی بابت بیجنگ میں موجود جنرل پرویز مشرف اور پنڈی کی فوجی ہائی کمان کے درمیان گفتگو کی وائر ٹیپنگ نہیں کی۔ ممبئی حملوں کے دہشت گردوں اور ہینڈلرز کے درمیان ہونے والی ٹیلی فونک گفتگو کی ریکارڈنگ آپ ابھی انٹرنیٹ پر سرچ کر کے سن سکتے ہیں۔
پاکستانی انٹیلی جینس ایجنسیوں سمیت اب کسی کو شرلک ہومز اور عمران سیریز پڑھنے اور جیمز بانڈ فلمیں دیکھنے کی حاجت نہیں۔
بقول میر صاحب

آنکھ ہو تو آئینہ خانہ ہے دہر
منہ نظر آتا ہے دیواروں کے بیچ
آج کی دنیا میں کسی کا کسی کو جاسوسی سے روکنا اور کسی کا کسی کو جاسوسی نہ کرنے کا یقین دلانا سوائے وقت کے زیاں کے کچھ بھی نہیں۔اگر ہم پے کسی نے اب تک ہاتھ نہیں ڈالا یا بلیک میل نہیں کیا تو اس کا یہ مطلب نہیں کہ ہمیں کوئی نہیں دیکھ رہا ۔آسمان پر خدا ہے اور زمین پر نائبِ خدا کی انٹیلی جینس ایجنسیاں ۔۔۔۔
وسعت اللہ خان
بی بی سی اردو ڈاٹ کام، کراچی

Rubbish in Rio de Janeiro

The polluted waters of Guanabara Bay, where the Rio 2016 Olympic Games sailing events will take place. Rio de Janeiro is the second-largest city in Brazil, the sixth-largest city in the Americas, and the world’s thirty-ninth largest city by population. The metropolis is anchor to the Rio de Janeiro metropolitan area, the second most populous metropolitan area in Brazil, the seventh-most populous in the Americas, and the twenty-third largest in the world. Rio de Janeiro is the capital of the state of Rio de Janeiro, Brazil’s third-most populous state. Part of the city has been designated as a World Heritage Site, named “Rio de Janeiro: Carioca Landscapes between the Mountain and the Sea”, by UNESCO on 1 July 2012 as a Cultural Landscape.

Has life changed for Tunisia after the Revolution?

Men and women in Tunisia struggle to find work, five years after the Arab Spring ignited in the North African country over a lack of economic and political opportunity.

Highs and lows from the Australian Open

The 2016 Australian Open was a tennis tournament that took place at Melbourne Park between 18–31 January 2016.  It was the 104th edition of the Australian Open, and the first Grand Slam tournament of the year. The tournament consisted of events for professional players in singles, doubles and mixed doubles play. Junior and wheelchair players competed in singles and doubles tournaments.
Novak Djokovic successfully defended the men’s singles title and thus won a record-equaling sixth Australian Open title. Serena Williams was the defending champion in the women’s singles but failed to defend her title, losing to Angelique Kerber in the final; by winning, Kerber became the first German player of any gender to win a Grand Slam title since Steffi Graf won her last such title at the 1999 French Open. As in previous years, this year’s tournament’s title sponsor was Kia. This edition set a new attendance record for the tournament of 720,363.

لیپ ٹاپ کو ٹپ ٹاپ کیسے رکھیں ؟ Caring for Your Laptop

آج کل لیپ ٹاپ کا زمانہ ہے۔ قریباً 90 فیصد کالج کے طلباء کے پاس لیپ ٹاپ موجود ہے۔ اس کے علاوہ گھر اور دفاتر میں بھی لیپ ٹاپ کا استعمال بالکل عام ہو چکا ہے۔ لیپ ٹاپ ، پی سی کے مقابلے میں بیس فیصد کم بجلی استعمال کرتا تو ہر کوئی لیپ ٹاپ کیوں نہ لے۔ جب ہم پی سی کئی گنا مہنگا لیپ ٹاپ خریدتے ہیں تو ہمیں اس کا خیال بھی رکھنا چاہیے۔ آئیے آپ کو چند مفید ٹپس دیتے ہیں ، جن کی مدد سے آپ اپنے لیپ ٹاپ کو بہترین حالت میں رکھ سکتے ہیں۔

 ہمیشہ ہموار اور سخت سطح پر رکھیں لیپ ٹاپ کی خرابی کی اہم وجہ اسے سخت اور برابر یا ہموار سطح پر نہ رکھنا ہے۔ زیادہ تر ہم لیپ ٹاپ کو ٹانگوں پر، تکیے یا بیڈ پر رکھ کر استعمال کرتے ہیں۔ غیر ہموار سطح پر لیپ ٹاپ رکھنے کی وجہ سے اس میں سے نکلنے والی گرم ہوا کا بہاؤ بند ہو جاتا ہے اور لیپ ٹاپ گرم ہونا شروع ہو جاتا ہے۔ اس لیے لیپ ٹاپ کو ہمیشہ ہموار اور سخت سطح پر رکھیں تاکہ ہوا کا یہ بہاؤ متاثر نہ ہو۔

 لیپ ٹاپ کو ٹانگوں پر رکھ کر استعمال کرنا انسانی صحت کے لیے بھی نقصان دہ ہے۔ بہتر یہ ہے کہ لیپ ٹاپ رکھنے کا اسٹینڈ استعمال کیا جائے۔ مکمل آف کر کے بیگ میں رکھیں لیپ ٹاپ کو شٹ ڈاؤن کرتے ہی فوراً ڈھکن بند کر کے بیگ میں مت ڈالیں۔ ہارڈ ڈسک کو مکمل آف ہونے میں چند سیکنڈز درکار ہوتے ہیں اس لیے مکمل طور پر آف ہونے کے بعد ہی لیپ ٹاپ کو بیک پیک میں ڈالیں۔

چارجنگ ہمیشہ لگی نہ رکھیں ہر وقت چارج پر لگا کر لیپ ٹاپ استعمال کرنا اس کی بیٹری کو خراب کر دیتا ہے۔ جب بیٹری مکمل چارج ہو جائے تو اسے مکمل استعمال بھی کریں۔ لیپ ٹاپ کی بیٹری کو بہترین حالت میں رکھنے کے لیے ہر پندرہ بیس دن کے بعد اسے مکمل طور پر استعمال کریں حتیٰ کہ بیٹری بالکل ختم ہو جائے اور لیپ ٹاپ آف ہو جائے۔ 

اس کے بعد لیپ ٹاپ کو چار سے پانچ گھنٹے تک استعمال مت کریں۔ اس وقفے کے بعد لیپ ٹاپ کو ایک دفعہ مکمل چارج کریں۔ چارجنگ ختم اور چارج کرنے کے دوران آپ لیپ ٹاپ کو استعمال کر سکتے ہیں۔ یہ عمل جاری رکھنے سے لیپ ٹاپ کی بیٹری بہتری حالت میں رہتی ہے۔ اس کے علاوہ آپ کو معلوم ہونا چاہیے کہ لیپ ٹاپ کو یا دیگر ڈیوائسز کو ہمیشہ چارج پر لگا رہنے سے بجلی کا بے انتہا زیاں ہوتا ہے کیونکہ ڈیوائس کو مکمل چارج ہونے کے بعد مزید انرجی نہیں چاہیے ہوتی جبکہ پلگ لگا ہونے کی وجہ سے مزید آنے والی چارجنگ صرف اور صرف ضائع ہو رہی ہوتی ہے۔ 

لیپ ٹاپ کی صفائی کریں کچھ عرصے کے بعد لیپ ٹاپ کی صفائی بھی ضروری ہے۔ ہم جب اسے استعمال کر رہے ہوتے ہیں تو اس میں دھول اور مٹی جا رہی ہوتی ہے۔ یہ دھول مٹی کی بورڈ کے نیچے جمع ہو کر کی بورڈ اور لیپ ٹاپ کی کارکردگی کو متاثر کرتی ہے، اس لیے اسے تیز ہوا یا کاٹن سے جتنا ہو سکے صاف کرتے رہیں۔ شٹ ڈاؤن ضرور کریں لیپ ٹاپ کا زیادہ استعمال کرنے والے اکثر اسے شٹ ڈاؤن نہیں کرتے بلکہ اسے ہمیشہ آن ہی رہنے دیتے ہیں۔

 اگر آپ اپنے لیپ ٹاپ کی کارکردگی کو بہتر رکھنا چاہتے ہیں تو جب یہ استعمال میں نہ ہو، اسے شٹ ڈاؤن کر دیں۔ چوروں سے باخبر رہیں اگر آپ لیپ ٹاپ کو سفر میں ساتھ رکھتے ہیں، تو اس بات کے لیے تیار رہیں کہ یہ چوری بھی ہو سکتا ہے۔ سب سے پہلے تو ہمیشہ اپنے لیپ ٹاپ کی حفاظت کریں۔ اس کے بعد اگر کوئی انتہائی اہم ڈاکیومنٹ رکھنا ہے تو اسے اِنکرپٹ کر کے رکھیں تاکہ خدانخواستہ کسی حادثے کی صورت میں کسی دوسرے کے ہاتھ نہ لگ سکے۔ 

ایک اہم چیز لاگ ان پاس ورڈ بھی ہے۔ ہمیشہ ونڈوز پر پاس ورڈ لگا کر رکھیں تاکہ غیر ضروری چھیڑ چھاڑ سے محفوظ رہے۔ یہ بات یقیناً آپ کو دلچسپ لگے گی کہ لیپ ٹاپس اتنی زیادہ تعداد میں موجود ہیں کہ دنیا میں ہر 53 سیکنڈز میں ایک لیپ ٹاپ چوری ہو رہا ہے۔ بیک اپ لیپ ٹاپ پر موجود اپنے ڈیٹا کا ہمیشہ بیک اپ بنا کر رکھتے رہیں۔ زیادہ تر لوگ اس بات کی پرواہ نہیں کرتے، لیکن یہ چیز بہت اہم ہے۔ آج کل ایکسٹرنل ڈرائیوز بہت سستی ہو چکی ہیں۔ بلکہ اب بڑی اسٹوریج کی حامل یو ایس بی فلیش ڈرائیوز سستے داموں دستیاب ہیں۔ ایک یو ایس بی لے کر اپنا اہم ڈیٹا اس پر بیک اپ ضرور کرتے رہیں۔

 (مجلے ’’ کمپیوٹنگ‘‘ سے ماخوذ)